کوئی نئی چوٹ پِھر سے کھاؤ! اداس لوگو

کوئی نئی چوٹ پِھر سے کھاؤ! اداس لوگو
کہا تھا کِس نے، کہ مسکراؤ! اُداس لوگو

گُزر رہی ہیں گلی سے، پھر ماتمی ہوائیں
کِواڑ کھولو ، دئیے بُجھاؤ! اُداس لوگو

جو رات مقتل میں بال کھولے اُتر رہی تھی
وہ رات کیسی رہی ، سناؤ! اُداس لوگو

کہاں تلک، بام و در چراغاں کیے رکھو گے
بِچھڑنے والوں کو، بھول جاؤ! اُداس لوگو

اُجاڑ جنگل ، ڈری فضا، ہانپتی ہوائیں
یہیں کہیں بستیاں بساؤ! اُداس لوگو

یہ کِس نے سہمی ہوئی فضا میں ہمیں پکارا
یہ کِس نے آواز دی، کہ آؤ! اُداس لوگو

یہ جاں گنوانے کی رُت یونہی رائیگاں نہ جائے
سرِ سناں، کوئی سر سجاؤ! اُداس لوگو

اُسی کی باتوں سے ہی طبیعت سنبھل سکے گی
کہیں سے محسن کو ڈھونڈ لاؤ! اُداس لوگو

10 تبصرہ جات:

کوثر بیگ said...

افف بہت دل کو چھونے والے اشعار ہیں۔۔ بہت شکریہ شیئرنگ کے لئے۔۔

آپ چاہے تو میرے بلاگ سے امجد حیدراابادی کا کلام بھی لے سکتے ہیں کیونکہ یہاں میں نےان کا کلام نہیں دیکھا اس لئے کہا ہے برا نہ مانئے گا۔ جیسے آپ کی مرضی۔۔۔۔

muhammad naveed said...

بہت خوبصورت الفاظ ہیں نقوی صاحب بھی کمال کرتے ہیں

اس غزل کو میں نے بے اپنے بلاگ پر بھی چھاپا مارا ہے امید ہے ناراض نہ ہوں گے
http://dastanarab.blogspot.ae/

IMI said...

عمدہ کلام اداس لوگو

Khurram Shahzad said...

واہ واہ کیا عمدہ شعر ہے
اُسی کی باتوں سے ہی طبیعت سنبھل سکے گی
کہیں سے محسن کو ڈھونڈ لاؤ! اُداس لوگو

Urdu Tips

Amjad Naeem said...

بهت خوب

Kahloon Jutt said...

عمدہ اور پیارے الفاظ ہیں. دل کو چهو لینے والی شاعری ہے نقوی صاحب کی.

Kahloon Jutt said...

کہاں سے؟ قتیل شفائی کی کتاب کا نام بتا سکتا ہے کوئی؟

Asadullah Saqib said...

بہت اچھی

Anonymous said...

زبردست

Fashion & Beauty Tips said...




Read online Urdu Digests,Urdu Books,Novels,Magazines,Safarnama,Islamic Books,http://bookspoint.net/






Post a Comment